تازہ ترین
انٹر بینک: ڈالر کی قیمت میں چند پیسہ کمیگوگل میپس میں بڑی تبدیلی جو بیشتر افراد کو پسند نہیں آئیملک میں سونے کی قیمت میں اضافہبرائل مرغی کے گوشت کی قیمت میں اضافہروپے کی قدر بحال ہونے لگی ڈالر مزید سستاانٹر بینک میں ڈالر مزید سستاموسم سرما میں ادرک لینا کیوں فائدہ مند ہے؟ کھانے کے طریقے جانیںنواز شریف کی اسلام آباد ہائی کورٹ میں پیشیورلڈکپ کون جیتے گا؟ بڑی پیش گوئیپنجاب بھر میں ماسک پہننا لازمی قرارملک کا ماحول اس وقت انتخابات کے لیے سازگار آصف زرداریملک میں سونے کی قیمت میں کمیواٹس ایپ چینلز استعمال کرنے والے صارفین کے لیے نیاں فیچر متعارفڈالر کی قیمت میں معمولی کمیملک کو دیوالیہ ہونے سے بچایا، ریاست بچ گئی سیاست بھی بچ جائے گی، شہبازشریفمہنگائی کے مارے عوام پر بجلی بم گرانےکی تیاری مکملپیٹرول کی قیمت میں اضافے کا امکانگوگل سرچ انجن کا ایک نیا دلچسپ فیوچر متعارفعالمی مارکیٹ میں سونے کی قیمت میں اضافہپاکستان اسٹاک ایکسچینج میں مثبت رجحان

دعازہرا کا انٹرویو کرنے والی یوٹیوبر کیلئے کیا سوالات کڑے ہو گئے؟

کراچی سے لاہور پہنچ کر پسند کی شادی کرنے والی لڑکی، دعا زہرا اور اِس کے شوہر سے انٹرویو لینے والی یوٹیوبر خود کڑے سوالوں کی زد میں آ گئی ہیں۔

لاہور سے تعلق رکھنے والے ایک صحافی نے یوٹیوبر، ماڈل، اداکارہ زنیرا ماہم سے سخت سوالات کیے ہیں جن کے خاتون میزبان تسلی بخش جواب دیتی ہوئی نظر نہیں آ رہیں۔

کچھ دیر قبل ہی سوشل میڈیا سائٹس پر اپلوڈ ہونے والے زنیرا ماہم کے انٹرویو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ وہ دعا زہرا کیس کی صحیح سے معلومات یا اس میں شامل دفعات بھی صحیح سے نہیں جانتی ہیں۔

میزبان خاتون کا بتانا ہے کہ وہ 24 سال کی ہیں اور شادی شدہ ہیں، انہوں نے دعا زہرا کے نیچے گدی اُنہیں بڑا نہیں بلکہ برابر دکھانے کے لیے رکھی تھی۔

وہ دعا زہرا اور اُس کے شوہر ظہیر احمد کے ساتھ براہِ راست نہیں بلکہ پولیس اور وکلاء کے ذریعے بات چیت کر رہی تھیں۔

خاتون میزبان، زنیرا ماہم کا ایک جانب بتانا ہے کہ کمرے میں صرف وہ، دعا اور ظہیر ہی موجود تھے جبکہ دوسری جانب اُن کا کہنا ہے کہ انٹرویو کے دوران دیواروں پر نظر آنے والے سائے ظہیر کے گھر کے افراد کے تھے جو بار بار کمرے میں آ رہے تھے۔

واضح رہے کہ زنیرا ماہم کی جانب سے عدالتی فیصلے کے بعد دعا اور ظہیر کا کیا گیا انٹرویو خوب وائرل ہوا تھا جس کے بعد سے سوشل میڈیا سمیت ’مین اسٹریم میڈیا‘ پر بھی خاتون میزبان کو سخت سوالات کا سامنا ہے۔

دوسری جانب دعا زہرا کے والد کا کہنا ہے کہ ’اُنہوں نے سپریم کورٹ سے رجوع کر لیا ہے، خاتون میزبان کو جَلد ہی سپریم کورٹ کی جانب سے نوٹس مل جائے گا‘۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »