تازہ ترین
پانچ شہروں سے متعلق ریڈالرٹ جاری کیا ہوا ہے، شیخ رشیدکنزیومر موومنٹ غریب عوام کی داد رسی کے لیے جنگی بنیادوں پر کام کرے، محمد حسین محنتیمسلم ممالک ہماری حکومت کو تسلیم کریں، افغان وزیراعظمپریانتھا کو کس نے قینچی ماری اور کس نے لاش جلائی؟ 7 مرکزی ملزمان کا پتا چل گیالاہور میں دھماکا، ایک شخص جاں بحق اور متعدد زخمیایران کے ساتھ مذاکرات پر ہار ماننے کا وقت نہیں، امریکی صدرپاکستان کی پہلی خواجہ سرا ڈاکٹر سارہ گل نے ملک میں ایک نئی تاریخ رقم کی ہے، سعید غنیلتا منگیشکر انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں زیرعلاج، ڈاکٹروں کی دعا کی اپیلحکومت چھوٹے کاروبار کیلئے لیز پر زمین فراہم کرے گی، وزیراعظم کا اعلاناندرون ملک سفر پرپاکستانیوں کا گھیرا تنگ، فضائی ٹکٹ پر شناختی کارڈ نمبر درج ہوگاپی ٹی آئی حکومت کے دعووں کے برعکس مہنگائی نے عام آدمی کی زندگی مشکل بنادی ہےکراچی: ایف آئی اےکی میڈیسن مارکیٹ میں کارروائی، بھاری تعداد میں جعلی ادویات برآمدڈاکٹرطارق بنوری نے چیئرمین ایچ ای سی کا چارج دوبارہ سنبھال لیاکراچی میں بھی گدھوں کے گوشت کے استعمال کا خدشہنسلہ ٹاور کیس: بلڈرز نے عدالت سے ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کر لیکورونا کیسز: این سی او سی نے نئی پابندیاں نافذ کردیںشاہ رخ جتوئی کا اسپتال میں رہنےکا معاملہ، بلاول نے سندھ حکومت کو بری الذمہ قرار دیدیاممبئی میں لنگر انداز بھارتی جنگی بحری جہاز میں دھماکا، 3 اہلکار ہلاکابوظبی پر ڈرون حملوں کے بعد سعودی اتحاد کی یمن میں بمباری، 20 افراد ہلاککرشمہ یا کورونا ویکسین کا کمال؟ معذور شخص چلنے اور بولنے لگا

روپے کی قدر میں زبردست کمی کے باوجود درآمدات بڑھ رہی ہیں، میاں زاہد حسین

میاں زاہد حسین: فائل فوٹو

نیشنل بزنس گروپ پاکستان کے چیئرمین، پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فورم وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کےصدراورسابق صوبائی وزیر  میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ کرنسی کی قدرمیں کمی سے برآمدات میں اضافہاوردرآمدات میں کمی ہوتی ہے مگر پاکستان میں روپے کی قدرمیں زبردست کمی سے درآمدات مہنگی ہونے کے باوجود بڑھرہی ہیں کیونکہ پاکستان کی معیشت کا دارومدار پٹرولیم مصنوعات، پام آئل اور صنعتی استعمال کے کیمیکلز کی درآمدپر ہے درآمدات میں ڈالر ٹرم میں اضافہ سے معیشت کولاحق خطرات بھی بڑھ رہے ہیں مگر انھیں برآمدات بڑھائےبغیرکنٹرول کرنا ممکن نہیں ہے۔

معیشت کو درپیش خطرات سے کاروباری برادری میں بے چینی بڑھ رہی ہے۔ میاں زاہدحسین نے کاروباری برادری سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جس ملک میں مہنگائی دنیا کے دیگر ممالک سے زیادہ ہووہاں عام آدمی کی آمدنی میں اضافے کی کوشش بھی دنیا کے دیگرممالک سے زیادہ ہونی چائیے مگراس نقطے کونظرانداز کرنے سے معیشت کوسنگین مسائل کا سامنا کرنا پڑا ہے جو اب عوام کوبھگتنا پڑرہا ہے۔ اب آئی ایم ایف سےبجلی اورگیس کی قیمتوں میں اضافہ کا معاہدہ کیا گیا ہے جس سے افراد زربڑھے گا جبکہ معاہدے کے تحت پٹرولیم لیویکو بتدریج تیس روپے تک بڑھایا جائے گا۔ عالمی ادارے کی خواہش پر ٹیکس گزاروں پربوجھ بڑھانے اورمختلف شعبوں سےٹیکس استثنیٰ ختم کرنے کا کئی سو ارب روپے کا بوجھ بھی عوام پرہی ڈالا جائے گا کیونکہ حکومت کے لئے یہ ایک آسانآپشن ہے۔ میاں زاہد حسین نے کہا کہ تین سال میں اکنامک ٹیم میں چاربنیادی تبدیلیاں کی گئی ہیں۔ سب نے بلند بانگدعوے کئے مگرتوقعات پرکوئی بھی پورا نہیں اترسکا اورمعیشت کی حالت بہترہونے کے بجائے بگڑتی چلی گئی جس کےبعد ہمیشہ کی طرح آئی ایم ایف سے درخواست کی گئی ہے کہ ڈوبتی ہوئی معیشت کو سنبھالا جائے تاکہ ملک دیوالیہنہ ہو جائے۔ آئی ایم ایف سے معاہدے میں جن شرائط کو مانا گیا ہے ان میں ترقیاتی منصوبوں کو پس پشت ڈالکرمعاشی استحکام کوترجیح دینے کی پالیسی سب سے اہم ہے جسے بیان نہیں کیا جا رہا ہے۔ میاں زاہد حسین نے مذیدکہا کہ زرعی شعبہ عوام کوغذائی تحفظ فراہم کرتا ہے، دیہی آبادی کو زریعہ معاش فراہم کرتا ہے اوراسکی وجہ سےٹیکسٹائل، شوگر، کاغذ، بیج، کیڑے مارادویات، کھاد، مشینری، آلات اوردیگر صنعتیں چلتی ہیں اوربرآمدی آمدنی کا بڑاحصہ اسی شعبہ سے وابستہ ہے۔ جی ڈی پی میں اسکا حصہ 19.2 فیصداورانتالیس فیصد افراد کا روزگار براہ راستاس سے وابستہ ہے مگراسےوہ توجہ نہیں دی جا رہی ہے جودینی چائیے جسکی وجہ سے معیشت کومسائل کا سامناہے۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »