تازہ ترین
آئی جی سندھ مشتاق مہر کو عہدے سے ہٹا دیا گیاچیئرمین پاکستان بزنس گروپ فراز الرحمان کی شیخ خلیفہ کی وفات پر اظہار تعزیت کے لئے قونصل جنرل عرب امارات سے ملاقاتآباد اور پاکستان انجینئرنگ کونسل کے باہمی اشتراک سے نئے گریجویٹ انجینئرز کی انٹرن شپ کا آغازامریکی کانگریس کی 50 سال میں پہلی بار اڑن طشتریاں نظر آنے کے واقعات پر سماعتلوٹوں کے خلاف فیصلے پر سپریم کورٹ کا شکریہ ادا کرتے ہیں، عمران خان فیصلے پر ردعملہائی بلڈ پریشر کے شکار افراد میں ظاہر ہونے والی علاماتسابق وزیر اعظم عمران خان کی حمایت میں ملک گیر مظاہروں کے بعد بیرون ملک بھی مظاہروں کا سلسلہ جاریعمران کے فونز چوری ہونے کا معاملہ، سی سی ٹی وی فوٹیجز میں گمشدگی کے شواہد نہ مل سکےحکومت کا چیئرمین نیب کو ہٹانے کا فیصلہکراچی دھماکا: وزیراعظم کا وزیراعلیٰ کو فون، ہر ممکن تعاون کی پیشکشملک میں ڈالر 196 روپے کا ہوگیاآرٹیکل 63 اے کی تشریح کیلئے صدارتی ریفرنس پر سماعت مکمل، فیصلہ آج سنایا جائیگاخشک سالی میں گھرے چولستان کے باسی قطرہ قطرہ پانی کو ترس گئےکراچی کے علاقے کھارادر میں دھماکا،خاتون جاں بحق، 12 افراد زخمیکراچی کے علاقے کھارادر میں دھماکے کی اطلاعپانی کی قلت، دریائے سندھ بعض مقامات پر صحرا بن گیاسیسی میں کام کرنے والے نجی سیکورٹی گارڈز کی کم سے کم اجرت 25 ہزار کردی گئی: سعید غنیروپے کے مقابلے میں ڈالر کی اونچی اڑان جاری، آج کتنا مہنگا ہوا؟شیخ محمد بن زید سے شارجہ کے المرشدی قبیلے کے سربراہ قاسم المرشدی کی تعزیتعمران خان کے جان کے خطرے سے متعلق بیان پر جوڈیشل کمیشن بنانے کی پیشکش

وزیراعظم عمران خان کا زراعت کو بھرپور توجہ دینے کا فیصلہ بروقت ہے، میاں زاہد حسین

میاں زاہد حسین: فائل فوٹو

ایف پی سی سی آئی کے نیشنل بزنس گروپ کے چیئرمین، پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فورم وآل کراچی انڈسٹریلالائنس کے صدراورسابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے زراعت کوبھرپور توجہ دینے اور اس شعبہ کی ترقی کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کا فیصلہ درست اور بروقت ہے جسکیحمایت کرتے ہیں۔

زرعی شعبہ ایک دہائی سے مسلسل زوال پزیر ہے مگر گزشتہ چند سالوں میں اسکی حالت مزید خرابہوگئی ہے، جس کی وجہ سے ملک میں دالوں، چینی، گندم، اور کاٹن کی شدید قلت اور مہنگائی میں ڈبل ڈیجیٹ ا ضافہہے۔ جسکا حل زمینی حقائق کے مطابق قلیل وطویل المعیاد پالیسیوں کی تشکیل ہے۔ میاں زاہد حسین نے کاروباری برادریسے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وباء کے باوجود شرح نمو میں بہتری کے امکانات روشن ہو رہے ہیں اور اگر مرکزی بینکحسب سابق مثبت کردار ادا کرتا رہا اور معیشت کے بارے میں اسکے اقدامات پاکستانی زمینی حقائق کے مطابق رہے توپاکستان کی شرح نموعالمی اداروں کی پیشگوئی سے بڑھ سکتی ہے۔ پاکستان کو جی ایس پی پلس اسٹیٹس کے مسئلہکو مناسب سفارتی اور بھرپور خارجہ پالیسی کے ذریعے حل کرنا ہوگا ورنہ پاکستان کو تین ارب ڈالر کی ایکسپورٹ میںکمی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ اس وقت مشکلات کے باوجود کنسٹرکشن کا شعبہ ترقی کر رہا ہے، مینوفیکچرنگ کے حالاتپہلے سے بہت بہتر ہیں، بڑی صنعتوں کی شرح نمو بہتر ہو رہی ہے جوخوش آئند ہے۔ وزیر خزانہ شوکت ترین بھیمعاشی استحکام کے ساتھ ساتھ اقتصادی ترقی کے حامی ہیں وہ برآمدات بڑھانا اورٹیکس نیٹ کو خاطرخواہ حد تکپھیلانا چاہتے ہیں جبکہ اشیائے خورو نوش کی قلت کا سلسلہ ختم کرنے میں سنجیدہ ہیں۔ وزیر خزانہ نے غربت کےخاتمے اور گردشی قرضہ میں کمی کے لئے اہم اقدامات کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے مثبت اثرات مرتب ہونگے۔معاشیترقی کی رفتار بڑھانے کے لئے حکومت کو بینکوں سے قرضے کم کرنے کی ضرورت ہے تاکہ نجی شعبوں کو زیادہ قرضےمل سکیں اور ملک میں بے روزگاری میں کمی آئے۔ میاں زاہد حسین نے مزید کہا کہ موجودہ حالات میں مرکزی بینکشرح سود میں مزید دو فیصد کمی کرے کیونکہ اس میں اضافہ سے عوام اور کاروباری برادری پر بوجھ بڑھےگا، اور نئیسرمایہ کاری میں کمی واقع ہوگی۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »