تازہ ترین
نائیجر میں پاکستان کے سفیراحمد علی سروہی کی وزیر صنعت جیبو سلاماتو گوروزا ماگاگی سے ملاقاتکیوی وزیر اعظم نے کورونا کے باعث اپنی شادی ملتوی کر دیرضوان آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی کرکٹر آف دی ایئر قرارمسلم عقیدے کے سبب وزارتی ذمہ داریوں سے فارغ کیا گیا: برطانوی رکن پارلیمنٹمارٹرگولہ پھٹنے سے 4 افراد جاں بحقاغوا برائے تاوان کی وارداتوں میں ملوث جعلی کسٹم انسپکٹرگرفتارنوازشریف کو باہر بھیجنے کا فیصلہ 100 فیصد عمران خان کا تھا: اسد عمر29واں آل پاکستان شوٹنگ بال ٹورنامنٹ کا آغاز:70ٹیموں مد مقابل ہیںایلون مسک دماغی چپ کی انسانی جانچ کے قریبسندھ پولیس کے پاس واٹس ایپ کال ٹریس کرنے کی ٹیکنالوجی موجود نہ ہونے کا انکشافپپدریائے سندھ کی 3 ڈولفنز کو سیٹلائٹ ٹیگس لگاکر دریا میں چھوڑ دیا گیاصدارتی نظام کا شوشہ حکومتی ناکامی اور مہنگائی سمیت عوام کے سلگتے مسائل سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے، محمد حسین محنتیایک ہفتے میں 24 اشیا کی قیمتوں میں اضافہ، مہنگائی کی شرح 19.36 فیصد پرآگئیلمس: ملازمین کے کاموں میں سکندر جونیجو، سرفراز میمن ودیگر رکاوٹ اور بلیک میلنگ کر رہے ہیں: قلندر بخش بوزدارکراچی کی ضروریات کونظراندازکرنا کمزورمعیشت سے کھیلنے کے مترادف ہے، میاں زاہد حسینشرمیلا کی والدہ سے کیا ان کے بینک اکاؤنٹس کا پوچھتی؟ نادیہ خانڈکیتی کے کیس میں شوہر کے سامنے خاتون سے زیادتی کا بھی انکشافلاہور: انار کلی بازار دھماکے کیلئے کتنے دہشتگرد آئے؟ تفصیلات سامنے آ گئیںگرل فرینڈ کی ماں کو گردہ عطیہ کرنے والے شخص کو دھوکا، لڑکی نے کسی اور سے شادی کرلیبھیک مانگنے والی لڑکی پر دکاندار نےگرم گھی پھینک دیا

برآمدی صنعتوں کے مسائل حل کئے جائیں ، زیرو ریٹنگ بحال کی جائے، میاں زاہد حسین

فائل فوٹو

ایف پی سی سی آئی بزنس مین پینل کے سینئر چیئرمین ،پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ غیر ملکی خریداروں نے سیالکوٹ کی ایکسپورٹ انڈسٹری کی ادائیگیاں روک لی ہیں جبکہ انھیں ریفنڈ بھی ادا نہیں کئے جا رہے ہیں جس سے اس شعبے کو 1 ارب ڈالر تک کا نقصان ہو سکتا ہے ۔

اس شعبہ کو مسائل سے نکالنے کے لئے زیرو ریٹنگ کی سہولت دی جائے تاکہ یہ اپنا وجود قائم رکھ سکے ۔ میاں زاہد حسین سے سیا لکوٹ کے برآمد کنندگان نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گارمنٹس، کھیلوں کا سامان، دستانے، آلات جراہی، لیدرگارمنٹس اورہوزری کی صنعت لیکویڈیٹی کے بحران کا شکار ہیں ۔ غیر ملکی گاہکوں نے مال تو منگوا لیا ہے مگر وائرس کی وجہ سے وہ بک نہیں رہا اس لئے ادائیگیاں روکی گئی ہیں جن کا نوٹس لیا جائے اور نو پے منٹ نو ریفنڈ کا سسٹم بحال کیا جائے کیونکہ ایف بی آر کی جانب سے ریفنڈز کی فوری ادائیگی کا وعدہ صرف دعویٰ ثابت ہوا ہے ۔

میاں زاہد حسین نے کہا کہ اگر برآمدکنندگان کے مسائل حل نہیں کئے جائیں گے تو برآمدات کا ہدف جو 25ارب ڈالر ہے کسی صورت میں حاصل نہیں کیا جا سکے گا ۔ انھوں نے کہا کہ کرونا وائرس کی وجہ سے برآمدات پہلے ہی گر رہی ہیں اور ترسیلات میں بھی کمی واقع ہو رہی ہے جبکہ سیالکوٹ کی برآمدی صنعت کی ایکسپورٹ میں 30 فیصد سے زیادہ کمی ممکن ہے جس کی جنوری، فروری اور مارچ کی برآمدات کی ادائیگیاں غیر ملکی خریداروں نے غیر معینہ مدت تک روک لی ہیں ۔ ان حالات میں چھوٹی اور درمیانے درجے کی برآمدی صنعتوں کےلئے بجلی کے بلوں اور ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی کے لئے پیسے نہیں ہیں تاہم زیرو ریٹنگ کی سہولت بحال کی جائے تو صورتحال بہتر ہو سکتی ہے جس سے یہ صنعتیں بھی بچ جائیں گی، ہزاروں افراد کا روزگار بحال رہے گا جبکہ حکومت کو زرمبادلہ کی مد میں بھی آمدنی ہو گی -اگر اس شعبہ کو نظر انداز کیا جاتا رہا تو ہزاروں چھوٹی اور درمیانے درجہ کی صنعتیں بند اور لوگ بے روزگار ہو جائیں گے جبکہ حکومت کی آمدنی بھی متاثر ہو گی ۔

انھوں نے کہا کہ موجودہ صورتحال کا نوٹس لیا جائے اور ملکی برآمدات سے منسلک صنعتوں کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائیں ۔

زیرو ریٹنگ کے خاتمہ سے کاروبار ی برادری کے مسائل اور کرپشن میں اضافہ کے علاوہ کچھ حاصل نہیں کیا جا سکا ہے اس لئے ناکام تجربہ بار بار نہ دہرایا جائے کیونکہ نئی صنعتیں تو لگ نہیں رہی ہیں اور جو چل رہی ہیں انھیں بند ہونے سے بچانے کی ضرورت ہے ۔ اس وقت ملک کو کاروبار شکن نہیں بلکہ کاروبار دوست فیصلوں کی ضرورت ہے ۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »