تازہ ترین
دریائے سندھ کی 3 ڈولفنز کو سیٹلائٹ ٹیگس لگاکر دریا میں چھوڑ دیا گیاصدارتی نظام کا شوشہ حکومتی ناکامی اور مہنگائی سمیت عوام کے سلگتے مسائل سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے، محمد حسین محنتیایک ہفتے میں 24 اشیا کی قیمتوں میں اضافہ، مہنگائی کی شرح 19.36 فیصد پرآگئیلمس: ملازمین کے کاموں میں سکندر جونیجو، سرفراز میمن ودیگر رکاوٹ اور بلیک میلنگ کر رہے ہیں: قلندر بخش بوزدارکراچی کی ضروریات کونظراندازکرنا کمزورمعیشت سے کھیلنے کے مترادف ہے، میاں زاہد حسینشرمیلا کی والدہ سے کیا ان کے بینک اکاؤنٹس کا پوچھتی؟ نادیہ خانڈکیتی کے کیس میں شوہر کے سامنے خاتون سے زیادتی کا بھی انکشافلاہور: انار کلی بازار دھماکے کیلئے کتنے دہشتگرد آئے؟ تفصیلات سامنے آ گئیںگرل فرینڈ کی ماں کو گردہ عطیہ کرنے والے شخص کو دھوکا، لڑکی نے کسی اور سے شادی کرلیبھیک مانگنے والی لڑکی پر دکاندار نےگرم گھی پھینک دیاجماعت اسلامی کی جانب سے لاہور بم دھماکے کی مذمتناقص پلاننگ اور تاخیر سےکیےگئے فیصلے سانحہ مری کی اہم وجہ ہیں، تحقیقاتی رپورٹکراچی میں تیسری شاہ اکیڈمی کرکٹ پریمئیر لیگ شروع، چار ٹیموں کے درمیان دلچسب مقابلےپانچ شہروں سے متعلق ریڈالرٹ جاری کیا ہوا ہے، شیخ رشیدکنزیومر موومنٹ غریب عوام کی داد رسی کے لیے جنگی بنیادوں پر کام کرے، محمد حسین محنتیمسلم ممالک ہماری حکومت کو تسلیم کریں، افغان وزیراعظمپریانتھا کو کس نے قینچی ماری اور کس نے لاش جلائی؟ 7 مرکزی ملزمان کا پتا چل گیالاہور میں دھماکا، ایک شخص جاں بحق اور متعدد زخمیایران کے ساتھ مذاکرات پر ہار ماننے کا وقت نہیں، امریکی صدرپاکستان کی پہلی خواجہ سرا ڈاکٹر سارہ گل نے ملک میں ایک نئی تاریخ رقم کی ہے، سعید غنی

کورنا کیخلاف جنگ میں سندھ کارڈ نہیں چلے گا: شاہ محمود

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے قومی اسمبلی کے اجلاس سے خطاب میں کہا ہے کہ کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں سندھ کارڈ یا صوبائی کارڈ نہیں چلے گا۔

قومی اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری کی زیر صدارت شروع ہوا جس میں کورونا وائرس کے حوالے سے بحث کی گئی۔

دوران اجلاس ڈپٹی اسپیکر کی جانب سے ارکان کو ایک ایک نشست کا فاصلہ رکھنے کی ہدایت کی گئی۔

اجلاس سے خطاب میں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ دنیا کورونا وبا کے باعث کرب کا شکار ہے، گزشتہ دنوں مختلف سیاسی جماعتوں نے مشاورتی بیٹھک کی اورتمام سیاسی جماعتیں اس نتیجے پر پہنچیں کہ پارلیمنٹ کا اجلاس بلایا جائے۔

انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے مطالبے پر مشاورت کے لیے اجلاس منعقد کیا، مشاورت اور تجاویز کے بعد مشترکہ لائحہ عمل اختیار کیا جائے گا۔

ان کا کہنا ہے کہ ماہرین متفق ہیں کہ کورونا کی ویکسین آنے تک مختلف طریقوں سے پھیلاؤ روکنے کی کوشش کی جائے، دوسری جنگ عظیم کے بعد دنیا نے اتنا بڑا بحران نہیں دیکھا، خیال ہے کہ ویکسین 18 ماہ سے 2 سال تک آئے گی۔

وزیرخارجہ کا کہنا تھاکہ 18 ویں ترمیم کے بعد صحت کا شعبہ صوبوں کو منتقل ہوچکا ہے، گزشتہ 12 سال سے پیپلز پارٹی کی حکومت سندھ میں ہے جبکہ گزشتہ 10 سال پنجاب میں ن لیگ کی حکومت رہی، ہمیں جوخدشات تھے، اگر وہ ہوتے تو سسٹم اب تک تباہ ہوچکا ہوتا لیکن اللہ کا کرم ہےکہ ہمارا صحت کا نظام ناکام نہیں ہوا۔

انہوں نے مزید کہا کہ متفقہ رائے کے ذریعے آگے بڑھنے کا فیصلہ کیا گیا اور پاکستان نے دیگر ممالک کی نسبت زیادہ بڑا ردعمل دیا، نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) مرتب کی گئی اورتمام اکائیوں کو اس میں نمائندگی دی گئی، 18 ویں ترمیم کو جانتے ہوئے صحت عامہ میں صوبوں کے لیے لچک کا مظاہرہ کیا گیا۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »