تازہ ترین
سعید غنی کی ہتک عزت کی درخواست پر پی ٹی آئی رہنما حلیم عادل پر فرد جرم عائدراولپنڈی میں شادی ہال کی لفٹ گرگئی، ایک شخص جاں بحق، متعدد زخمیسانحہ مری انتظامیہ کی غفلت سے پیش آیا، انکوائری کمیٹی کی رپورٹصدرمملکت نے ایف بی آر کی انتظامی ناانصافی پر بزرگ شہری سے معذرت کرلیجھوٹ اور غلط بیانی وفاقی وزراء کا وطیرہ بن چکا ہے، امتیاز شیخشریف فیملی حکومت سے چار لوگوں کیلئے ڈیل مانگ رہی ہے، شہباز گل کا دعویٰشہزادہ ہیری نے گارڈز واپس لینے کیلئے برطانوی حکومت کیخلاف مقدمے کی دھمکی دیدیانسٹا گرام اب ٹک ٹاک کو اپنے پلیٹ فارم پر شامل کرنے کو تیارمیں عمران نیازی کو رات کو ڈراؤنے خواب کی طرح آتا ہوں: شہباز شریففیکٹری میں زہریلی گیس پھیلنے سے چینی شہری ہلاک، 2 متاثردنیا بھر میں اومی کرون سونامی کی طرح پھیلنے لگالی مارکیٹ کی عمارت سے اینٹی ائیرکرافٹ گن سمیت نیٹو کا جدید اسلحہ برآمد’اب بل نہیں سندھ واپس لیں گے‘، بلدیاتی قانون کیخلاف پی ٹی آئی، MQM اور GDA کا مظاہرہطالبان نے افغان اثاثوں کی بحالی کا مطالبہ کر دیاکورونا: این سی او سی نے پابندیوں کا نفاذ شروع کردیاعلی زیدی پی ٹی آئی کے سیکریٹری اطلاعات احمد جواد کے انکشافات پر صفائی دیں، سعید غنیایس بی سی کے سرٹیفکیٹ کےبغیر نئی عمارات کو یوٹیلیٹی کنکشنز نہ دینے کا حکمکیا منال نے احسن کی دولت کی وجہ سے ان سے شادی کی ہے؟کورونا کیسز: سندھ حکومت کا اسکول کھلے رکھنے کا فیصلہبپن راوت کا ہیلی کاپٹرگرنے کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ سامنے آگئی، وجہ کیا تھی؟

اسلام آباد: تعلیمی اداروں میں سافٹ ڈرنک کی فروخت پر پابندی

ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے تعلیمی اداروں میں سافٹ ڈرنکس کی فروخت پر پابندی عائد کردی۔

پاکستان کی خبر رساں نیوز ایجنسی کے مطابق ڈسٹرک مجسٹریٹ نی سیکشن 144 کے تحت دو ماہ کے لیے اسلام آباد کے تعلیمی اداروں میں سافٹ ڈرنکس کی فروخت پر پابندی عائد کی۔

مقامی انتظامیہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق دارالحکومت میں موجود تعلیمی اداروں اور مدارس کی حدود میں کوئی بھی شخص کسی بھی قسم کی سافٹ ڈرنکس، انرجی اور میٹھے ڈرنکس فروخت نہیں کرے گا۔

نوٹیفکیشن میں لکھا ہے کہ عام طور سے تعلیمی اداروں میں موجود کیفے وغیرہ میں بغیر یہ دیکھے کاربونیٹڈ ڈرنکس فروخت ہوتی ہیں کہ اس میں صحت بخش اجزاء موجود ہیں یا نہیں۔اس طرح کی چیزیں بچوں کی صحت کو نقصان پہنچانے کا باعث بنتی ہیں۔

نوٹیفکیشن کے مطابق یہی وجہ ہے ان مشروبات کی فروخت کیخلاف ایکشن لینے کی ضرورت تھی۔

ڈپٹی کمشنر کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ سوشل میڈیا پر اس فیصلے سے قبل ایک پول کیا گیا جس کے بعد اِن مشروبات پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا گیا۔ پولنگ میں 91 فیصد لوگوں نے مشروبات پر پابندی کے حق میں ووٹ دیے۔

ڈپٹی کمشنر کا مزید کہنا تھا کہ عالمی ادارہ برائے صحت کے مطابق ’یہ مشروبات بچوں کی صحت کے لیے نقصان دہ ہیں۔‘

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »