تازہ ترین
سندھ حکومت پر الزام تراشی کرنے سے پہلے احمد جواد کے الزامات کا جواب دیں، امتیاز شیخنائیجر میں پاکستان کے سفیراحمد علی سروہی کی وزیر صنعت جیبو سلاماتو گوروزا ماگاگی سے ملاقاتکیوی وزیر اعظم نے کورونا کے باعث اپنی شادی ملتوی کر دیرضوان آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی کرکٹر آف دی ایئر قرارمسلم عقیدے کے سبب وزارتی ذمہ داریوں سے فارغ کیا گیا: برطانوی رکن پارلیمنٹمارٹرگولہ پھٹنے سے 4 افراد جاں بحقاغوا برائے تاوان کی وارداتوں میں ملوث جعلی کسٹم انسپکٹرگرفتارنوازشریف کو باہر بھیجنے کا فیصلہ 100 فیصد عمران خان کا تھا: اسد عمر29واں آل پاکستان شوٹنگ بال ٹورنامنٹ کا آغاز:70ٹیموں مد مقابل ہیںایلون مسک دماغی چپ کی انسانی جانچ کے قریبسندھ پولیس کے پاس واٹس ایپ کال ٹریس کرنے کی ٹیکنالوجی موجود نہ ہونے کا انکشافپپدریائے سندھ کی 3 ڈولفنز کو سیٹلائٹ ٹیگس لگاکر دریا میں چھوڑ دیا گیاصدارتی نظام کا شوشہ حکومتی ناکامی اور مہنگائی سمیت عوام کے سلگتے مسائل سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے، محمد حسین محنتیایک ہفتے میں 24 اشیا کی قیمتوں میں اضافہ، مہنگائی کی شرح 19.36 فیصد پرآگئیلمس: ملازمین کے کاموں میں سکندر جونیجو، سرفراز میمن ودیگر رکاوٹ اور بلیک میلنگ کر رہے ہیں: قلندر بخش بوزدارکراچی کی ضروریات کونظراندازکرنا کمزورمعیشت سے کھیلنے کے مترادف ہے، میاں زاہد حسینشرمیلا کی والدہ سے کیا ان کے بینک اکاؤنٹس کا پوچھتی؟ نادیہ خانڈکیتی کے کیس میں شوہر کے سامنے خاتون سے زیادتی کا بھی انکشافلاہور: انار کلی بازار دھماکے کیلئے کتنے دہشتگرد آئے؟ تفصیلات سامنے آ گئیںگرل فرینڈ کی ماں کو گردہ عطیہ کرنے والے شخص کو دھوکا، لڑکی نے کسی اور سے شادی کرلی

ضلعی انتظامیہ نے نیا ناظم آباد ہاوسنگ اسکیم غیر قانونی قرار دے دی

کراچی میں ضلع غربی کے ڈپٹی کمشنر فیاض سولنگی نے نیا ناظم آباد ہاؤسنگ اسکیم کو غیر قانونی قرار دے دیا تاہم ہاؤسنگ اسکیم کی انتظامیہ کی درخواست پر سندھ ہائی کورٹ نے ضلعی انتظامیہ کو کارروائی سے روک دیا۔

کراچی میں نیاناظم آباد نامی رہائشی منصوبے پر جعل سازی کا الزام لگ گیا۔ ڈپٹی کمشنر ضلع غربی فیاض سولنگی نے منصوبے کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے محکمہ اینٹی کرپشن، سیکرٹری لینڈ یوٹی لائزیشن اور دیگر متعلقہ حکام کو خط لکھا۔

خط میں نشاندہی کی گئی کہ سیمنٹ فیکٹری کے لیے 1960 میں 1074 ایکڑ زمین 30 سالہ لیز پر الاٹ کی گئی جسے ایک سال بعد جعلسازی سے 99 سالہ لیز میں تبدیل کردیا گیا۔
خط میں حوالہ دیا گیا کہ سپریم کورٹ نے 2012 میں اِس زمین کی فروخت اور منتقلی پر پابندی لگائی تھی مگر اس زمین پر نہ صرف رہائشی منصوبہ بنایا گیا بلکہ فروخت اور منتقلی کا عمل بھی جاری رہا۔

خط میں نشاندہی کی گئی کہ سندھ حکومت نے نیا ناظم آباد رہائشی اسکیم کی زمین 2013 میں منسوخ کردی تھی جبکہ 2013 میں اسکیم کا گھٹ ودھ فارم (کمی بیشی فارم) محکمہ سروے اینڈ سیٹلمنٹ نے کینسل کردیا تھا لیکن نیا ناظم آباد کی انتظامیہ نے ایک جعلی خط کے ذریعے اسے 2016 میں بحال ظاہر کیا جس کا کوئی ریکارڈ موجود نہیں۔

خط میں پروجیکٹ کے لیے 128 ایکڑ زمین پابندی کے باوجود لیز کیے جانے کا انکشاف بھی کیا گیا۔

ڈپٹی کمشنر ضلع غربی فیاض عالم سولنگی نے سیکرٹری لینڈ یوٹیلائزیشن سے نیا ناظم آباد ہاؤسنگ اسکیم کے لیز آرڈر اور فیس چالان کی تصدیق کرنے اور سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی سے نیا ناظم آباد ہاؤسنگ اسکیم کا لے آؤٹ پلان منسوخ کرنے کی سفارش کی۔

خیال رہے کہ نیا ناظم آباد اسکیم کے مالکان میں عارف حبیب اور عقیل کریم ڈھیڈی شامل ہیں۔

نیا ناظم آباد انتظامیہ سندھ ہائیکورٹ پہنچ گئی
دوسری جانب نیا ناظم آباد انتظامیہ ڈی سی ویسٹ کے خطوط کے خلاف عدالت پہنچ گئی۔

درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا کہ بورڈ آف ریونیو نے تعمیرات کے خلاف غیرقانونی کارروائی کی کوشش کی ہے، لیز کو غیر قانونی طور پر منسوخ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

درخواست میں مزید مؤقف اختیار کیا کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی (ایس بی سی اے) کو بھی لے آؤٹ پلان منسوخ کرنے کی ہدایت کی گئی، اداروں کی کارروائی غیر قانونی ہے۔

سندھ ہائیکورٹ نے تمام اداروں کو نیا ناظم آباد کے خلاف کارروائی سے روکتے ہوئے فریقین کو 27 فروری کے لیے نوٹس جاری کردیے۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »