تازہ ترین
نائیجر میں پاکستان کے سفیراحمد علی سروہی کی وزیر صنعت جیبو سلاماتو گوروزا ماگاگی سے ملاقاتکیوی وزیر اعظم نے کورونا کے باعث اپنی شادی ملتوی کر دیرضوان آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی کرکٹر آف دی ایئر قرارمسلم عقیدے کے سبب وزارتی ذمہ داریوں سے فارغ کیا گیا: برطانوی رکن پارلیمنٹمارٹرگولہ پھٹنے سے 4 افراد جاں بحقاغوا برائے تاوان کی وارداتوں میں ملوث جعلی کسٹم انسپکٹرگرفتارنوازشریف کو باہر بھیجنے کا فیصلہ 100 فیصد عمران خان کا تھا: اسد عمر29واں آل پاکستان شوٹنگ بال ٹورنامنٹ کا آغاز:70ٹیموں مد مقابل ہیںایلون مسک دماغی چپ کی انسانی جانچ کے قریبسندھ پولیس کے پاس واٹس ایپ کال ٹریس کرنے کی ٹیکنالوجی موجود نہ ہونے کا انکشافپپدریائے سندھ کی 3 ڈولفنز کو سیٹلائٹ ٹیگس لگاکر دریا میں چھوڑ دیا گیاصدارتی نظام کا شوشہ حکومتی ناکامی اور مہنگائی سمیت عوام کے سلگتے مسائل سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے، محمد حسین محنتیایک ہفتے میں 24 اشیا کی قیمتوں میں اضافہ، مہنگائی کی شرح 19.36 فیصد پرآگئیلمس: ملازمین کے کاموں میں سکندر جونیجو، سرفراز میمن ودیگر رکاوٹ اور بلیک میلنگ کر رہے ہیں: قلندر بخش بوزدارکراچی کی ضروریات کونظراندازکرنا کمزورمعیشت سے کھیلنے کے مترادف ہے، میاں زاہد حسینشرمیلا کی والدہ سے کیا ان کے بینک اکاؤنٹس کا پوچھتی؟ نادیہ خانڈکیتی کے کیس میں شوہر کے سامنے خاتون سے زیادتی کا بھی انکشافلاہور: انار کلی بازار دھماکے کیلئے کتنے دہشتگرد آئے؟ تفصیلات سامنے آ گئیںگرل فرینڈ کی ماں کو گردہ عطیہ کرنے والے شخص کو دھوکا، لڑکی نے کسی اور سے شادی کرلیبھیک مانگنے والی لڑکی پر دکاندار نےگرم گھی پھینک دیا

آئی جی تین سال کے لئے مقرر کیا جاتا ہے سندھ حکومت نے2008 سے 12 آئی جی تبدیل کروائے، حلیم عادل شیخ

کراچی: پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی نائب صدر و پارلیمانی لیڈر حلیم عادل شیخ کی سندھ اسمبلی میں ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا سندھ حکومت کے وزراء کہہ رہے ہیں جو تین نام دیئے ہیں ان میں سے ایک آئی جی ہوگا، کیوں ہوگا ایسا، ؟ آپ نے 2008 سے آج تک 12 آئی جی تبدیل کرا چکے ہو۔

مہینوں میں آئی جی کے تبادلے کئے جاتے رہے ہیں۔ آئی جی کی مقرری تین سال سال کے لئے ہوتی ہے، پولیس رولز 2019 کے تحت شق نمبر 11 کے تحت آئی جی کی پوسٹنگ کے لئے وفاق تین نام بھیجے گا سعید غنی او مرتضیٰ وہاب سن لیں آپ کا پولیس آرڈر 2019 کیا کہہ رہا ہے یہ سندھ حکومت کا اپنا بنایا ہوا قانون ہے سندھ حکومت کہہ رہی ہے کہ ان کے تین نام بھیجے گئے ہیں ان میں سے آئی جی کو منتخب کیا جائے یہ لوگ خود ہی اپنے بنائے گئے قانون کی خلاف ورزی کر رہے ہیں۔

اگر آئی جی سندھ کو سیاسی نہیں بناتے تو آی یہ معاملہ یہاں تک نہیں پہنچتا، تینوں صوبوں میں اگر آئی جی تبدیل ہوئے تو ان پر کسی نے پریس کانفرنس نہیں کی سندھ حکومت آئی جی کے تبادلے کے لئے خط کتابت کرتی تو معاملات حل ہوجاتے، سندھ حکومت کےوزراء نے میڈیا میں آکر سندھ پولیس کو بدنام کرنے کی کوشش کی وفاقی حکومت ایک کیبنیٹ ہے جو قانون کے مطابق چل رہی ہے، وزیر اعظم نے آئی جی سندھ کے تبادلے کا معاملہ کیبینٹ کے سامنے رکھا کیبینیٹ نے آئی جی سندھ کو تبدیل کرنے سے انکار کیا ہے، اور بھیجے گئے ناموں پر اعتراضات ہیں۔

اب جو قانونی طریقہ ہے وہ اختیار کیا جائے گا آئی جی سندھ کو تبدیل کرانا سندھ حکومت کا حق ہے لیکن طریقہ کار غلط ہے اس طرح ایک فورس کے سربراہ کو خراب کر کے نکالا نہیں جاتا ہے، آپ لوگ آئی جی کو نہیں ہٹا سکتے ہیں ان کے خلاف کوئی کرنمل ہونے کے چارجز نہیں ہیں جو پولیس آفیسر ان کی بات نہیں مانے اس کو ہٹا دیا جاتا ہے ڈاکٹر رضوان نے رپورٹ دی تو ہٹا دیا ہم سب کپتان کےکھلاڑی اور سپاہی ہیں ہم نےسندھ کےعوام کی جنگ لڑنی ہیں یہ پدی کاشوربہ کہتےہیں کہ گورنر سےبات نہیں کرینگے ہم نےحق وسچ کی بات کرنی ہے آئی جی کلیم امام کا نام سندھ حکومت نے ہی بھیجاتھا جب تک ایس ایس پی نےوزراء کےخلاف رپورٹ نہیں دی آئی جی ٹھیک تھا۔

منشیات فروشوں اور مافیاز کےنام آئےتو آئی جی برے ہوگئے بڑے ڈاکووں کو کوئی بےنقاب کرتاہےتو ہم آواز ملاتے رہیں گے میری آواز بند کرنے کے لئے مجھ پر قاتلانہ حملہ کیاگیا ڈاکٹررضوان کاقصور یہ ہےکہ وہ راو انوار کیس میں انوسٹی گیشن افسر ہے، آئی جی راو انوار کو لگادیں رولا مکادیں لاڈلہ بچہ آئی جی لگ جائےگاتو مسئلہ ہوجائےگا۔

انہوں نے مزید کہا ہ ڈاکٹر رضوان رپورٹ پر جے آئی ٹی بنائی جائے عمرکوٹ، جیکب آباد، چنیسرگوٹھ پرجج کی سربراہی میں جےآئی ٹی بنادیں تاکہ حقائق عوام تک لائے جا سکیں۔

ہم عمران خان کی مشاورت پر یقین رکھتےہیں گورنر وزیراعلی سےمشاورت کرینگےتو اس میں کیابرائی ہے ہم خوامخواہ مسائل نہیں چاہتے یہ اچھاراستہ تھاکہ گورنر مشاورت کریں وفاقی کابینہ سےدرخواست کرتاہوں کہ وزیراعلی کو طلب کرلیں اگر گورنرسےبات نہیں کرنی تو یہ نیک شگون نہیں ہے۔

وفاقی کابینہ کافیصلہ ہےکہ گورنر کےزریعے مشاورت ہوگی مسئلےکوحل کرنےکےلیےبات کی جائے دھمکیاں نہ دی جائیں اس سےباز رہاجائے سندھ میں آئی جے کے معاملے پر اگر پیپلزپارٹی احتجاج کرے تو بنیادی سہولیات سے محروم عوام اپنا رد عمل دے گی ایڈز لگانے والے حکمرانوں اور کتوں سے کٹوانے والوں کا عوام ساتھ نہیں دے گی۔

سندھ حکومت کے دیگر محکمے برباد ہوچکے ہیں کسی وزیر کو نہیں ہٹایا گیا سب سے زیادہ صحت کا محکمہ خراب ہوچکا ہے وزیر صحت کو سب سے پہلے ہٹایا جاتا قانون کے مطابق آئی جی کی مقرری کے لئے وفاق کو تین نام دینے ہوتے ہیں پیپلزپارٹی کو آئی جی وہ چاہیے جو حاضر سائیں کہتا رہے، انہوں نے مزید کہا احساس پروگرام کے تحت اربوں کی اسکیمیں دی جارہی ہیں نیا پاکستان اسکیم کے تحت گھر دیئے جار رہے ہیں جب نچلے طبقے کو سب کچھ ملے گا تو تبدیلی ہوگی۔ اس موقعہ پر پی ٹی آئی اراکین سندھ اسمبلی جمال صدیقی، راجا اظہر ویگر بھی موجود تھے۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »