تازہ ترین
سعید غنی کی ہتک عزت کی درخواست پر پی ٹی آئی رہنما حلیم عادل پر فرد جرم عائدراولپنڈی میں شادی ہال کی لفٹ گرگئی، ایک شخص جاں بحق، متعدد زخمیسانحہ مری انتظامیہ کی غفلت سے پیش آیا، انکوائری کمیٹی کی رپورٹصدرمملکت نے ایف بی آر کی انتظامی ناانصافی پر بزرگ شہری سے معذرت کرلیجھوٹ اور غلط بیانی وفاقی وزراء کا وطیرہ بن چکا ہے، امتیاز شیخشریف فیملی حکومت سے چار لوگوں کیلئے ڈیل مانگ رہی ہے، شہباز گل کا دعویٰشہزادہ ہیری نے گارڈز واپس لینے کیلئے برطانوی حکومت کیخلاف مقدمے کی دھمکی دیدیانسٹا گرام اب ٹک ٹاک کو اپنے پلیٹ فارم پر شامل کرنے کو تیارمیں عمران نیازی کو رات کو ڈراؤنے خواب کی طرح آتا ہوں: شہباز شریففیکٹری میں زہریلی گیس پھیلنے سے چینی شہری ہلاک، 2 متاثردنیا بھر میں اومی کرون سونامی کی طرح پھیلنے لگالی مارکیٹ کی عمارت سے اینٹی ائیرکرافٹ گن سمیت نیٹو کا جدید اسلحہ برآمد’اب بل نہیں سندھ واپس لیں گے‘، بلدیاتی قانون کیخلاف پی ٹی آئی، MQM اور GDA کا مظاہرہطالبان نے افغان اثاثوں کی بحالی کا مطالبہ کر دیاکورونا: این سی او سی نے پابندیوں کا نفاذ شروع کردیاعلی زیدی پی ٹی آئی کے سیکریٹری اطلاعات احمد جواد کے انکشافات پر صفائی دیں، سعید غنیایس بی سی کے سرٹیفکیٹ کےبغیر نئی عمارات کو یوٹیلیٹی کنکشنز نہ دینے کا حکمکیا منال نے احسن کی دولت کی وجہ سے ان سے شادی کی ہے؟کورونا کیسز: سندھ حکومت کا اسکول کھلے رکھنے کا فیصلہبپن راوت کا ہیلی کاپٹرگرنے کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ سامنے آگئی، وجہ کیا تھی؟

آسٹریلیا کے خطرناک اونٹوں کو پاکستان سمیت مختلف ممالک پہنچانے کی کئی کوششیں ناکام ہوئیں

آسٹریلیا میں خشک سالی پر قابو پانے کیلئے پہلے مرحلے میں جن 10 ہزار اونٹوں کو گولیاں مار کر ہلاک کرنے کا مرحلہ شروع کیا گیا ہے، ایسے سینکڑوں اونٹوں کو اس سے قبل متعدد بار پکڑ کر پاکستان سمیت مختلف ملکوں میں درآمد کرنے کی کوششیں کی جا چکی ہیں مگر جنگلی “شطر بے مہار” کو قابو کرنا ناقابل عمل ہو چکا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق آسٹریلیا کے محکمہ ماحولیات و پانی کی جانب سے یہ فیصلہ ملک کے جنوبی علاقوں میں پانی کی کمی، خشک سالی کے خاتمے اور دیگر جنگلی حیات کی بقاء کیلئے کیا گیا ہے۔

ایک اندازے کے مطابق آسٹریلیا کے جنگلات میں میں 12 لاکھ سے زیادہ جنگلی اونٹ ہیں جو انتہائی خطرناک بھی ہیں۔

ایک پاکستانی میٹ کمپنی کے سربراہ کے مطابق انہوں نے آسٹریلوی بھیڑوں، بکروں اور گائے کی طرح ان اونٹوں کو بھی پاکستان لانے کی بیشتر کوششیں کیں مگر ناکام ہوئے، آسٹریلیوی اداروں نے اس سلسلے میں ان کی مدد کی۔

انہوں نے بتایا کہ انسانی جانیں خطرے میں ڈال کر انہوں نے جنگلی شطر بے مہارکو پکڑا جو کہ انتہائی مشکل ترین مرحلہ تھا جس میں کئی افراد زخمی بھی ہوئے، پھر جب ان اونٹوں کو پکڑ کر بحری جہاز میں پہنچایا گیا تو وہ اجنبی اور قید کے ماحول میں بدک گئے، توڑ پھوڑ بھی کی جس سے شپ کے الٹ جانے کا خدشہ پیدا ہو گیا اور یوں سیکیورٹی خدشات کی بناء پر ان کی آسٹریلیا سے درآمد روکنا پڑی۔

جنوبی آسٹریلیا کے حکام کے مطابق یہ جانور پانی بہت زیادہ پیتے ہیں اور منٹوں میں پانی کے جوہڑ کے جوہڑ ختم کر دیتے ہیں جس سے دیگر جنگلی حیات کی بقاء کے مسائل پیدا ہو رہے ہیں، اس سے بنیادی نظام کو نقصان پہنچ رہا ہے، خاندان اور برادریوں کو بھی خطرہ لاحق ہو گیا ہے۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »