تازہ ترین
سندھ حکومت پر الزام تراشی کرنے سے پہلے احمد جواد کے الزامات کا جواب دیں، امتیاز شیخنائیجر میں پاکستان کے سفیراحمد علی سروہی کی وزیر صنعت جیبو سلاماتو گوروزا ماگاگی سے ملاقاتکیوی وزیر اعظم نے کورونا کے باعث اپنی شادی ملتوی کر دیرضوان آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی کرکٹر آف دی ایئر قرارمسلم عقیدے کے سبب وزارتی ذمہ داریوں سے فارغ کیا گیا: برطانوی رکن پارلیمنٹمارٹرگولہ پھٹنے سے 4 افراد جاں بحقاغوا برائے تاوان کی وارداتوں میں ملوث جعلی کسٹم انسپکٹرگرفتارنوازشریف کو باہر بھیجنے کا فیصلہ 100 فیصد عمران خان کا تھا: اسد عمر29واں آل پاکستان شوٹنگ بال ٹورنامنٹ کا آغاز:70ٹیموں مد مقابل ہیںایلون مسک دماغی چپ کی انسانی جانچ کے قریبسندھ پولیس کے پاس واٹس ایپ کال ٹریس کرنے کی ٹیکنالوجی موجود نہ ہونے کا انکشافپپدریائے سندھ کی 3 ڈولفنز کو سیٹلائٹ ٹیگس لگاکر دریا میں چھوڑ دیا گیاصدارتی نظام کا شوشہ حکومتی ناکامی اور مہنگائی سمیت عوام کے سلگتے مسائل سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے، محمد حسین محنتیایک ہفتے میں 24 اشیا کی قیمتوں میں اضافہ، مہنگائی کی شرح 19.36 فیصد پرآگئیلمس: ملازمین کے کاموں میں سکندر جونیجو، سرفراز میمن ودیگر رکاوٹ اور بلیک میلنگ کر رہے ہیں: قلندر بخش بوزدارکراچی کی ضروریات کونظراندازکرنا کمزورمعیشت سے کھیلنے کے مترادف ہے، میاں زاہد حسینشرمیلا کی والدہ سے کیا ان کے بینک اکاؤنٹس کا پوچھتی؟ نادیہ خانڈکیتی کے کیس میں شوہر کے سامنے خاتون سے زیادتی کا بھی انکشافلاہور: انار کلی بازار دھماکے کیلئے کتنے دہشتگرد آئے؟ تفصیلات سامنے آ گئیںگرل فرینڈ کی ماں کو گردہ عطیہ کرنے والے شخص کو دھوکا، لڑکی نے کسی اور سے شادی کرلی

وفاقی حکومت مسلسل صوبائی معاملات میں مداخلت کر کے آئین سے انحراف کا عملی ثبوت دے رہی ہے

سندھ حکومت کے ترجمان و وزیراعلیٰ سندھ کے مشیر برائے قانون و ماحولیات بیرسٹر مرتضی وہاب نے وفاقی حکومت پر صوبائی معاملات میں مداخلت کا الزام لگادیا۔

گزشتہ دنوں سندھ کی اپوزیشن جماعتوں تحریک انصاف، گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس (جی ڈی اے) اور متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان کے رہنماؤں نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کی تھی۔

ملاقات میں آئی جی سندھ اور چیف سیکریٹری بھی موجود تھے جبکہ اس دوران اپوزیشن ارکان نے سندھ حکومت کی شکایتوں کے انبار لگا دیے تھے۔

اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کی جانب سے سندھ کے پولیس افسران کے تبادلے کیے گئے ہیں جس پر سندھ حکومت اور وفاق آمنے سامنے آگئے ہیں۔
سندھ اسمبلی بلڈنگ میں میڈیا سے گفتگو میں صوبائی حکومت کے ترجمان بیرسٹر مرتضی وہاب کا کہنا ہے کہ ایک سیاسی رہنما کے کہنے پر ایک پولیس افسر کو اسلام آباد بلایا گیا، آئین پڑھ لیں آپ کو وزیراعلیٰ کی بات سننا ہے نہ کہ کسی وفاقی وزیر کی۔

انہوں نے کہا کہ ہم کہتے تھے وفاق بے جا مداخلت کررہا ہے، گورنر کا عہدہ سیاسی نہیں صرف آئینی ہے مگر گورنر اپنے عہدے کے حلف سے مسلسل روگردانی کر رہے ہیں۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت مسلسل صوبائی معاملات میں مداخلت کر کے آئین سے انحراف کا عملی ثبوت دے رہی ہے اور اسلام آباد میں سیاست کے میدان کے پٹے ہوئے مہرے سازشوں میں مصروف عمل ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ گورنر سندھ کو سیاست کرنے کا شوق بہت ہے مگر اس سے پہلے انہیں آئین کا مطالعہ ضرور کرنا چاہیے تاکہ ان کو علم ہو سکے کہ ان کی آئینی حدود کسی چیز کی متقا ضی ہیں، اگر گورنر سندھ یا وفاقی حکومت سمجھتی ہے کہ ہم ان کے غیر آئینی اقدامات سے ڈر جائیں گے تو یہ ان کی خام خیالی ہے۔

ترجمان سندھ حکومت کا تحریک انصاف کے رہنماؤں پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اسلام آباد میں وزیراعظم کے سامنے ان کو سندھ کے حالات کا مقدمہ رکھنا چاہیے تھا مگر انہوں نے صرف سندھ حکومت اور وزیر اعلیٰ کے خلاف شکایتوں کے انبار لگائے، اس وقت سندھ ٹڈی دل کے حملوں کی زد میں ہے، فصلوں کا نقصان ہورہا ہے اور سندھ کا ہاری پریشان ہے مگر وفاقی حکومت اس ضمن میں کوئی مدد نہیں کر رہی۔

مرتضی وہاب کا کہنا ہے کہ پنجاب، خیبرپختونخوا اور بلوچستان میں گورنر صوبائی معاملات میں مداخلت کرتے نظر نہیں آئے مگر گورنرسندھ کے اقدامات اور بیانات قابل مذمت ہیں، گورنر سندھ کو چاہیے کہ آرٹیکل 105اور 6 بغور مطالعہ کریں تو ان کو اپنی آئینی حیثیت کا اندازہ ہو۔
گورنرسندھ عمران اسماعیل نے صوبائی حکومت کے ترجمان مرتضی وہاب کے الزام کا جواب دے دیا ہے۔

جامشور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گورنر سندھ کا کہنا تھا میرے پاس کسی ایس ایس پی کو لگانے یا ہٹانے کا کوئی اختیار نہیں، اگر صوبے کو ضرورت ہے تو وہ وفاق سے بات کرے۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »