تازہ ترین
سعید غنی کی ہتک عزت کی درخواست پر پی ٹی آئی رہنما حلیم عادل پر فرد جرم عائدراولپنڈی میں شادی ہال کی لفٹ گرگئی، ایک شخص جاں بحق، متعدد زخمیسانحہ مری انتظامیہ کی غفلت سے پیش آیا، انکوائری کمیٹی کی رپورٹصدرمملکت نے ایف بی آر کی انتظامی ناانصافی پر بزرگ شہری سے معذرت کرلیجھوٹ اور غلط بیانی وفاقی وزراء کا وطیرہ بن چکا ہے، امتیاز شیخشریف فیملی حکومت سے چار لوگوں کیلئے ڈیل مانگ رہی ہے، شہباز گل کا دعویٰشہزادہ ہیری نے گارڈز واپس لینے کیلئے برطانوی حکومت کیخلاف مقدمے کی دھمکی دیدیانسٹا گرام اب ٹک ٹاک کو اپنے پلیٹ فارم پر شامل کرنے کو تیارمیں عمران نیازی کو رات کو ڈراؤنے خواب کی طرح آتا ہوں: شہباز شریففیکٹری میں زہریلی گیس پھیلنے سے چینی شہری ہلاک، 2 متاثردنیا بھر میں اومی کرون سونامی کی طرح پھیلنے لگالی مارکیٹ کی عمارت سے اینٹی ائیرکرافٹ گن سمیت نیٹو کا جدید اسلحہ برآمد’اب بل نہیں سندھ واپس لیں گے‘، بلدیاتی قانون کیخلاف پی ٹی آئی، MQM اور GDA کا مظاہرہطالبان نے افغان اثاثوں کی بحالی کا مطالبہ کر دیاکورونا: این سی او سی نے پابندیوں کا نفاذ شروع کردیاعلی زیدی پی ٹی آئی کے سیکریٹری اطلاعات احمد جواد کے انکشافات پر صفائی دیں، سعید غنیایس بی سی کے سرٹیفکیٹ کےبغیر نئی عمارات کو یوٹیلیٹی کنکشنز نہ دینے کا حکمکیا منال نے احسن کی دولت کی وجہ سے ان سے شادی کی ہے؟کورونا کیسز: سندھ حکومت کا اسکول کھلے رکھنے کا فیصلہبپن راوت کا ہیلی کاپٹرگرنے کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ سامنے آگئی، وجہ کیا تھی؟

کراچی: ناظم آباد کے پارک سے بڑی تعداد میں انسانی ہڈیاں برآمد

کراچی کے علاقے ناظم آباد نمبر تین میں ایک نجی اسپتال کے قریب واقع پارک سے بڑی تعداد میں انسانی ہڈیاں برآمد ہو ئی ہیں۔

کراچی کے علاقے ناظم آباد کے معروف انو بھائی پارک سے کھدائی کے دوران بڑی تعداد میں انسانی ہڈیاں برآمد ہوئی ہیں تاہم پولیس حکام اسے دہشت گردی کے نتیجے کی بجائے اسپتالوں میں انسانی آپریشن کا فضلہ یعنی میڈیکل ویسٹیج قرار دے رہے۔

ایس ایس پی سینٹرل عارف اسلم راؤ کے مطابق ناظم آباد نمبر 3 میں واقع علاقے کے معروف انو بھائی پارک میں ان دنوں گرین لائن بس منصوبے کے سلسلے میں کھدائی کی جا رہی ہے۔

عارف اسلم کے مطابق اس دوران آج پارک کے مختلف مقامات سے کپڑے کے پراسرار رول اور گھتڑیاں برآمد ہوئیں۔

پولیس کے مطابق تعمیراتی ٹھیکیدار نے ناظم آباد پولیس کو اطلاع دی اور پولیس نے موقع پر پہنچ کر تمام ہڈیاں قبضے میں لے لیں۔

ایس پی سینٹرل عارف اسلم راؤ کے مطابق پارک سے کوئی ایک بھی انسانی ڈھانچہ برآمد نہیں ہوا بلکہ کپڑوں میں لپٹی یا بندھی ہوئی مختلف جسمانی حصوں اور سائز کی ہڈیاں ملی ہیں جو مختلف انداز میں بندھی اور زمین برد کی گئی لگتی ہیں۔

عارف اسلم کے مطابق ہڈیوں کے ابتدائی معائنے سے ہی اندازہ ہوتا ہے کہ یہ اسپتال کا میڈیکل ویسٹیج ہے۔

ایک اور پولیس افسر کے مطابق اس پارک کے ساتھ ہی ہڈی کا معروف نجی اسپتال موجود ہے جس کی انتظامیہ نے ماضی میں مختلف آپریشن کے دوران کاٹے گئے انسانی اعضاء اس پارک میں ٹھکانے لگانے کے سلسلے کی تصدیق کی ہے۔

نجی اسپتال کی انتظامیہ نے پولیس کے بیان کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم کاٹی گئی ہڈیوں کو مریض یا لواحقین کے حوالے کر دیتے ہیں یا اگر کوئی مریض اپنے اعضا اسپتال میں چھوڑ کر چلا جائے تو اسپتال انتظامیہ خود اسے قریبی قبرستان میں دفنا دیتے ہیں۔

پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے رہنما ڈاکٹر سجاد کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ اسپتال میں جمع ہونے والے طبی فضلے کے لیے پوری دنیا میں اصول رائج ہے کہ اسے مخصوص طریقہ کار کے تحت تلف کر دیا جاتا ہے تاہم بدقسمتی سے پاکستان میں اس اصول پر عمل درآمد نہیں ہوتا۔

ڈاکٹر سجاد نے مزید بتایا کہ اسپتال انتظامیہ کی بھی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ اگر وہ کسی مریض کو اس کے جسم کے کاٹے گئے اعضاء دے رہے ہیں تو انہیں محفوظ طریقے سے دیئے جائیں اور ہدایت کی جائے کہ ان اعضا کو پھینکا نا جائے کیونکہ اس سے بیماری دوسرے لوگوں کو لگنے کا بھی خدشہ ہے۔

ایس ایس پی عارف اسلم کے مطابق تمام ہڈیاں قبضے میں لے کر ان کا میڈیکل معائنہ کرایا جا رہا ہے۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »