تازہ ترین
ٹرک سے 400 کلو سے زائد چرس بر آمد، ملزم گرفتارافسران کے تبادلے کا معاملہ، وزیراعلیٰ سندھ کی افسران کو چارج نہ چھوڑنے کی ہدایتعمران خان کی حکومت گرانے کیلیے تمام آئینی وقانونی راستے اختیار کرینگے، پیپلز پارٹیطالبان نے بدھا مجسموں کی جگہ اور قدیم یادگاروں کو سیاحت کیلئے کھول دیاروپے کی قدر میں زبردست کمی کے باوجود درآمدات بڑھ رہی ہیں، میاں زاہد حسینعاصمہ جہانگیر فاؤنڈیشن نے نوازشریف کی تقریر پرحکومتی تنقید مسترد کردیائیرپورٹ پر مسافر کے بیگ سے کروڑوں روپے کی ہیروئن برآمدکراچی سمیت سندھ میں سی این جی اسٹیشنز کو ڈھائی ماہ کیلئے کی فراہمی بندججز کے سیمینار میں چیف گیسٹ اسے بلایا گیا جسے سپریم کورٹ نے سزا دی: وزیراعظمیو اے ای میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کردی گئیآڈیو لیک: فرض کریں ٹیپ درست ہے تو اصل کلپ کس کے پاس ہے؟جسٹس اطہر من اللہ’کورونا کے نئے ویرینٹ کا علم نہیں، تعلیمی سرگرمیاں جاری رکھنا چاہتے ہیں‘عمران خان کو نوجوان اقتدار میں لائے تھے وہی بھگائیں گے، سراج الحقاومی کرون سے متاثرہ مریضوں میں معمولی علامات ہیں، جنوبی افریقا میڈیکل ایسوسی ایشنمال و دولت نہیں بلکہ تعلیم سب سے بڑی نعمت ہے، محمد حسین محنتیحکومت نے آئی ایم ایف شرائط کے تحت منی بجٹ لانے کا فیصلہ کرلیااین اے 133 ضمنی الیکشن: ووٹرز سے قرآن پر حلف لیکر ووٹ خریدنے کے الزاماتگرین لائن منصوبہ کب آپریشنل ہو گا؟ اسد عمر نے کراچی والوں کو خوشخبری سنا دیمال دولت نہیں انسان کے اندر غیرت ضروری ہے، وزیراعظماومی کرون وائرس کا خدشہ: سندھ میں بوسٹر ڈوز لازمی قرار

کیا ٹیکنالوجی سرکس کا تصور بدل کر رکھ دیگی؟

‘سرکس’ جس نے ایک دفعہ بھی دیکھی اس کی یادیں اس کے ذہن میں تازہ رہ گئیں۔ بہترین تفریح ہونے کے باوجود جانوروں کے حقوق کی علم بردار تنظیمیں سرکس پر جانوروں کے استعمال پر اعتراض اٹھاتی رہی ہیں لیکن کیا ہاتھی، گھوڑے، شیر، بندر کے بغیر سرکس ممکن ہے؟

جی ہاں ممکن ہے، جانوروں کے حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیمنوں کے اعتراضات کو مد نظر رکھتے ہوئے جرمنی کی ایک سرکس کمپنی رونکالی نے روایتی سرکس کے تصور کو ہی بدل کر رکھ دیا ہے۔

رونکالی سرکس 1976 سے شائقین کا دل لبھا رہی ہے۔ پہلے یہ سرکس روایتی سرکس تھی۔ حال ہی میں اس کی انتظامیہ نے ایک فیصلہ کیا اور اب اس سرکس میں جانور ہیں بھی اور نہیں بھی۔ فرق صرف اتنا ہے کہ اس سرکس میں گوشت پوست کے جانوروں کی بجائے ہولو گرافک جانور موجود ہیں۔

رونکالی نے تھری ڈی ہولوگرافک تصاویر کو پروجیکٹر کے ذریعے استعمال کرتے ہوئے سرکس کا پنڈال سجا لیا۔ دیکھنے والے اتنے ہی محظوظ ہوئے جتنا وہ اصلی جانوروں کی سرکس دیکھ کر ہوتے۔

شائقین کا کہنا ہے کہ اس طرح سے وہ سرکس میں ان جانوروں کو بھی دیکھ سکیں گے جو نایاب ہو چکے ہیں یا جو محص تصوراتی ہیں۔

ہولو گرام ایک ٹیکنالوجی ہے جس میں روشنی کو کسی شکل میں تبدیل کر کے دکھایا جاتا ہے۔ اسے دکھانے کے لیے پروجیکٹرز کا استعمال کیا جاتا ہے۔

اس سرکس کی کامیابی سے محسوس یوں ہو رہا ہے کہ یہ ٹیکنالوجی سرکس کا تصور دنیا بھر میں تبدیل کر دے گی۔

برطانیہ میں 2020 میں جانوروں کی سرکس پر مکمل پابندی کا نوٹی فکیشن ابھی سے جاری کیا جا چکا ہے۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »