تازہ ترین
این اے 133 ضمنی انتخاب، پی پی کو 2018 کے مقابلے میں 26ہزار728 ووٹ زیادہ ملےبھارتی ریاست ناگالینڈ میں سکیورٹی فورسز نے فائرنگ کر کے 13مزدور مار ڈالےآئی ایم ایف کی نئی شرائط ملکی اداروں کو گروے رکھنے کے مترادف ہے، محمد حسین محنتیوہاڑی واقعہ، عثمان بزدار کی قائداعظم کے مجسمے پر فوری طورپر عینک لگانے کی ہدایتمنی لانڈرنگ کیس: جیکولین فرنینڈس کو بھارت سے باہر جانے سے روک دیا گیاگوادر کوقومی اور بین الاقوامی مافیاز کے رحم وکرم پر نہیں چھوڑیں گے، سراج الحقوزیراعظم کا پریانتھا کمارا کو بچانےکی کوشش کرنیوالے شخص کیلئے تمغہ شجاعت کا اعلانپریمئیر لیگ کرکٹ ٹورنامنٹ میں ملک بھر سے 12 ٹیموں کے 200 پلئرز نے حصہ لیاتیز رفتارگاڑی نے 4 بچوں کوکچل دیا، ایک بچہ جاں بحقاسسٹنٹ کمشنر کو فائرنگ کرکے قتل کردیا گیادنیا کی معمر ترین ٹیسٹ کرکٹر ایلین ایش110سال کی عمر میں انتقال کر گئیں’وزیراعظم 10 دسمبر کو کراچی کے پہلے جدید ترین ٹرانسپورٹ سسٹم کا افتتاح کریں گے‘ٹائر پھٹنے پر مسافروں کا طیارے کو دھکا لگانے کا انوکھا واقعہپاکستان سمیت دنیا بھر میں آج سندھی ثقافتی دن منایا جارہاہےلڑکی سے زیادتی کے الزام میں گرفتار سینئر سول جج ضمانت پر رہاسیالکوٹ واقعہ: گرفتار افراد میں سے 13 اہم ملزمان کی شناخت، تصاویر جاریملک میں قرآن و سنت جمہوریت و آئین کی بالادستی کیلئے اچھی قیادت کو آگے لانا ہوگا۔ لیاقت بلوچلاقانونیت اور کرپشن نے ملک کو کھوکھلا کر دیا، سراج الحقایک شخص مشتعل ہجوم سے پریانتھا کمارا کو بچانےکی تن تنہا کوشش کرتا رہاملک میں سونا 600 روپےفی تولہ سستا ہوگیا

دیسی ساختہ بم اور دھماکہ خیز مواد کا سراخ لگانے کے لیے ماہرین نے نیا طریقہ دریافت کر لیا

لندن: بم دھماکوں کے بعد تفتیشی افسران کے لیے سب سے بڑا چیلنج دیسی ساختہ بم اور دھماکہ خیز مواد کے ماخذ کا پتا لگانا ہوتا ہے۔ اس ضمن میں برطانوی ماہرین نے بم دھماکے اور بارود کا سراغ لگانے کا ایک بالکل نیا طریقہ دریافت کیا ہے۔

کنگزکالج لندن اور نارتھ امبریا یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے مشترکہ طور پر ایک ٹیکنالوجی وضع کی ہے جس میں آئن کروماٹوگرافی استعمال کی گئی ہے جسے ماس اسپیکٹرواسکوپی کی ایک قسم کہا جاتا ہے۔ اس کی تفصیل اینا لیٹکا چائمیکا ایکٹا میں شائع ہوئی ہے۔

اس ٹیکنالوجی کے ذریعے بارود کی معمولی مقدار میں بھی موجود کئی اجزا کا پتا لگایا جاسکتا ہے۔
پاکستان سمیت دنیا بھر میں گھریلو اور دیسی ساختہ بم کئی وارداتوں میں استعمال ہوتے ہیں۔ اس پر کام کرنے والے ڈاکٹر میٹیو گیلیڈابائنو کہتے ہیں کہ اب تک واقعات میں استعمال ہونے والے بارود کی معمولی مقدار کو نوٹ کرنا بہت مشکل تھا لیکن اب اصل مجرم کے پسینے کی بھی شناخت کی جاسکتی ہے۔ یہاں تک کہ گولی کے معمولی ذرات کو دیکھ کر بھی بارود کا پتا لگایا جاسکتا ہے۔

ڈاکٹرگیلیڈابائنو کے مطابق یہ طریقہ بہت تیزرفتار، مؤثر اور کم خرچ ہے جس میں ڈیٹا کا بھرپور جائزہ لیا جاتا ہے۔ اس طرح بم دھماکے اور کسی بھی واردات سے دھماکہ خیز مواد کا سراغ لگاسکتے ہیں۔

پاکستان سمیت دنیا بھر میں گھریلو اور دیسی ساختہ بم کئی وارداتوں میں استعمال ہوتے ہیں۔ اس پر کام کرنے والے ڈاکٹر میٹیو گیلیڈابائنو کہتے ہیں کہ اب تک واقعات میں استعمال ہونے والے بارود کی معمولی مقدار کو نوٹ کرنا بہت مشکل تھا لیکن اب اصل مجرم کے پسینے کی بھی شناخت کی جاسکتی ہے۔ یہاں تک کہ گولی کے معمولی ذرات کو دیکھ کر بھی بارود کا پتا لگایا جاسکتا ہے۔

ڈاکٹرگیلیڈابائنو کے مطابق یہ طریقہ بہت تیزرفتار، مؤثر اور کم خرچ ہے جس میں ڈیٹا کا بھرپور جائزہ لیا جاتا ہے۔ اس طرح بم دھماکے اور کسی بھی واردات سے دھماکہ خیز مواد کا سراغ لگاسکتے ہیں۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »