تازہ ترین
ہائی بلڈ پریشر کے شکار افراد میں ظاہر ہونے والی علاماتسابق وزیر اعظم عمران خان کی حمایت میں ملک گیر مظاہروں کے بعد بیرون ملک بھی مظاہروں کا سلسلہ جاریعمران کے فونز چوری ہونے کا معاملہ، سی سی ٹی وی فوٹیجز میں گمشدگی کے شواہد نہ مل سکےحکومت کا چیئرمین نیب کو ہٹانے کا فیصلہکراچی دھماکا: وزیراعظم کا وزیراعلیٰ کو فون، ہر ممکن تعاون کی پیشکشملک میں ڈالر 196 روپے کا ہوگیاآرٹیکل 63 اے کی تشریح کیلئے صدارتی ریفرنس پر سماعت مکمل، فیصلہ آج سنایا جائیگاخشک سالی میں گھرے چولستان کے باسی قطرہ قطرہ پانی کو ترس گئےکراچی کے علاقے کھارادر میں دھماکا،خاتون جاں بحق، 12 افراد زخمیکراچی کے علاقے کھارادر میں دھماکے کی اطلاعپانی کی قلت، دریائے سندھ بعض مقامات پر صحرا بن گیاسیسی میں کام کرنے والے نجی سیکورٹی گارڈز کی کم سے کم اجرت 25 ہزار کردی گئی: سعید غنیروپے کے مقابلے میں ڈالر کی اونچی اڑان جاری، آج کتنا مہنگا ہوا؟شیخ محمد بن زید سے شارجہ کے المرشدی قبیلے کے سربراہ قاسم المرشدی کی تعزیتعمران خان کے جان کے خطرے سے متعلق بیان پر جوڈیشل کمیشن بنانے کی پیشکشعمران خان کی سیکیورٹی کیلئے پولیس، ایف سی کی بھاری نفری تعیناتادارہ مداخلت کرے، ٹیکنوکریٹ حکومت لائے اور ستمبر میں الیکشن کرائے: شیخ رشیدسلیکٹڈ وزیر اعظم سے نجات بیرونی سازش نہیں ، جمہوری عمل تھا، بلاولوزیراعظم شہباز شریف کی شیخ خلیفہ کی وفات پر یو اے ای کے صدر شیخ محمد بن زید النہیان سے تعزیتنئی حکومت کے دعووں کے برعکس آٹا،گھی،گوشت اوردالیں سمیت بڑہتی ہوئی مہنگائی باعث تشویش ہے: محمد حسین محنتی

اس ملک میں بڑا مسئلہ جھوٹ اور دھوکے کا ہے: چیف جسٹس

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ: فائل فوٹو

اسلام آباد: (قومی مقاصد نیوز) 10 مئی 2019: چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کیس کی سماعت میں ریمارکس دیےکہ اس ملک میں سب سے بڑا مسئلہ جھوٹ اور دھوکے کا ہے اور اس ملک میں سب لوگ دھوکا دیتے ہیں۔

سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے خاتون ٹیچر کی فاٹا میں ایک وقت میں 2 نوکریاں کرنے سے متعلق کیس کی سماعت کی۔

خاتون ٹیچر کے وکیل نے بتایا کہ لبنیٰ بلقیس 2009 میں 9 ویں گریڈ میں اسکول ٹیچر لگیں، 2012 میں کنٹریکٹ پر 17 ویں گریڈ کی لیکچرار لگیں، لیکچرار بنیں تو ایک سال کی تنخواہ لیے بغیر اسکول ٹیچر والی نوکری سے چھٹی لی۔

وکیل کے دلائل پر چیف جسٹس نے کہا کہ سال بعد کنٹریکٹ بڑھا تو لیکچرر شپ جاری رکھی، اسکول والی تنخواہ بھی آتی رہی، اس پر خاتون ٹیچر کی وکیل نے بتایاکہ ہم نے تمام تنخواہیں واپس کر دی ہیں۔

اس موقع پر جسٹس سجاد علی شاہ نے ریمارکس دیے کہ خاتون ٹیچر نے دھوکہ دیا، 3 سال بعد اسکول والی نوکری سے استعفا دیا۔

جب کہ چیف جسٹس پاکستان کا کہنا تھاکہ خاتون ٹیچر حقائق کو نہیں جھٹلا سکتیں، ایک ہی وقت میں 2 نوکریاں جاری رکھیں جو کہ جرم ہے، اس ملک میں سب سے بڑا مسئلہ جھوٹ اور دھوکے کا ہے، ملک میں سب لوگ دھوکا دیتے ہیں، اگر پڑھے لکھے لوگ دھوکا دیں گے تو پھر ان پڑھ کیا کریں گے۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے خاتون ٹیچر کی وکیل سے مکالمہ کیا کہ آپ نے سوچا فاٹا کا معاملہ ہے کسی کو پتہ نہیں چلے گا، اس کے بعد تو آپ کسی پبلک سروس کے حقدار ہی نہیں رہتے، پہلی غلطی ہی آخری غلطی ہوتی ہے۔

بعد ازاں خاتون ٹیچر کے وکیل کے درخواست واپس لینے پر عدالت نے درخواست مسترد کر دی۔

About قومی مقاصد نیوز

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*

Translate »